آئندہ مالی سال بجٹ میں خام مال پر درآمدی ڈیوٹی کم کرائیں گے، مشیرتجارت عبد الرزاق داؤد

 مشیر تجارت عبد الرزاق داؤد نے کہا ہے کہ برآمدات میں اضافہ صرف ٹیکسٹائل سے ممکن نہیں،آئندہ مالی سال بجٹ میں خام مال پر درآمدی ڈیوٹی کم کرائیں گے، برآمدات دس سال میں مطلوبہ ہدف حاصل کرسکیں گی۔

ان کا کہنا تھا کہ پہلی بار پاکستان کے بنے ہوئے ٹریکٹر برآمد ہو رہے ہیں،ٹریکٹر کی برآمد پر کوئی سبسڈی نہیں دی جا رہی ہے ، انجینئر نگ صنعت کو آگے لے جانا ہے تو مراعات دینا ہوں گی ،برآمدات کا ہدف ایک سو ارب ڈالر لے جانے کے لیے دس سال لگیں گے۔

جمعہ کو قومی اسمبلی کی قائمہ کمیٹی برائے صنعت و پیداوار کو بریفنگ دیتے ہوئے مشیر تجارت عبد الرزاق داؤد نے بتایاکہ انجینئرنگ ڈیولپمنٹ بورڈ جتنا مضبوط ہونا چاہیے نہیں ہے،آج ملک میں 27 لاکھ موٹر سائیکل سالانہ بن رہی ہیں۔مشیر تجارت نے کہاکہ پہلی بار پاکستان کے بنے ہوئے ٹریکٹر برآمد ہو رہے ہیں،ٹریکٹر کی برآمد پر کوئی سبسڈی نہیں دی جا رہی ہے ۔

انہوں نے یہ بھی کہاکہ پاکستان ائیر کنڈیشنرز کی برآمدات شروع کرنے جا رہا ہے۔مشیر تجارت نے کہا کہ برآمدات میں اضافہ صرف ٹیکسٹائل سے ممکن نہیں،آئندہ مالی سال بجٹ میں خام مال پر درآمدی ڈیوٹی کم کرائیں گے۔آئندہ مالی سال کے بجٹ میں ڈیوٹی کو صفر کرنے یا کم از کم کرنے کا کہوں گا۔

مشیر تجارت نے کہاکہ انجینئر نگ صنعت کو آگے لے جانا ہے تو مراعات دینا ہوں گی۔مشیر تجارت نے کہا کہ ریونیو کم ہو گا لیکن صنعت چل پڑے گی۔مشیر تجارت نے کہاکہ ماضی میں ایف بی آر کام کرنے کے بجائے ٹیکس اور ڈیوٹیاں لگا کر ریونیو پورا کرتا ہے۔

مشیر تجارت نے کہاکہ صنعت کو ہم نے مل کر نقصان پہچایا ہے، برآمدات کا ہدف ایک سو ارب ڈالر تک لے جانے کے لیے دس سال لگیں گے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں