فیس بک لائیو اسٹریمنگ تبدیل، صارفین پر نئی پابندیاں عائد

سان فرانسسکو: سماجی رابطے کی سب سے بڑی ویب سائٹ فیس بک نے ویڈیو لائیو اسٹریمنگ میں نئی پابندیاں نافذ کرنے کا حتمی فیصلہ کرلیا۔

فیس بک کی جانب سے جاری ہونے والے بلاک پوسٹ میں بتایا گیا ہے کہ سانحہ کرائسٹ چرچ کی ویڈیو لائیو نشر ہونے کے بعد انتظامیہ کو صارفین کی جانب سے شدید تنقید کا نشانہ بنایا گیا اور سفارش کی گئی کہ شدت پسندانہ مواد کی روک تھام کے لیے فی الفور اقدامات کیے جائیں۔

فیس بک نے اپنے بلاگ کے ذریعے صارفین کو نئی پابندیوں سے متعلق آگاہ کیا اور بتایا کہ اب ویڈیو لائیو اسٹریمنگ کے لیے ’ون اسٹرائیک‘ پالیسی کا فی الفور اطلاق کیا جارہا ہے۔

ون اسٹرائیک پالیسی کے تحت لائیو اسٹریمنگ استعمال کرنے والے صارفین پر کمیونٹی اسٹینڈرڈ کا اطلاق ہوگا جس اس سے پہلے نہیں تھا۔ یعنی اب اگر کوئی شخص لائیو ویڈیو کو رپورٹ کرے گا تو انتظامیہ اُس کے خلاف ایکشن بھی لے گی۔

فیس بک کی جانب سے کمیونٹی اصولوں کے قواعد و ضوابط بھی بتائے گئے ہیں، سنگین خلاف ورزی کرنے والے صارفین کی ویڈیو کو فوری طور پر پلیٹ فارم سے ڈیلیٹ کرتے ہوئے اُس پر لائیو اسٹریمنگ کی پابندی عائد کی جائے گی اور اگر تسلسل کے ساتھ ویڈیوز کو رپورٹ کیا گیا تو آئی ڈی بلاک بھی کی جاسکتی ہے۔

نائب صدر گائے روسین کا کہنا تھا کہ لائیو اسٹریمنگ کے دوران تشدد یا دیگر نفرت انگیز مواد کی روک تھام کو یقینی بنانا ہے، صارفین کی جانب سے اس فیچر کے مثبت استعمال کی حوصلہ افزائی بھی کی جائے گی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں