سینئر صوبائی وزیرعبدالعلیم خان نیب کی حراست میں

لاہور: پنجاب کے سینئر صوبائی وزیرعبدالعلیم خان کو قومی احتساب بیورو نے حراست میں لے لیا ہے، علیم خان کے خلاف آمدن سے زائد اثاثوں کی تحقیقات چل رہی ہیں۔

پاکستان تحریک انصاف کے رہنما اور پنجاب کے سینئر وزیر بلدیات اور کمیونٹی ڈیولپمنٹ علیم خان کو
آمدن سے زائد اثاثے رکھنے اور آف شور کمپنی کے جرم میں گرفتار کیا گیا تھا۔

ذرائع کے مطابق نیب آفس لاہور میں پیشی کے موقع پرعبدالعلیم خان سے مختلف سوالات کیے گئے جبکہ 2 گھنٹے سے زائد جاری رہنے والی تحقیقات کے بعد انہیں حراست میں لے لیا۔ چیئرمین نیب جسٹس (ر) جاوید اقبال کو بھی علیم خان کی گرفتاری سے متعلق آگاہ کردیا گیا ہے،انہیں باقاعدہ گرفتاری کرکے حوالات منتقل کردیا گیا ہے، نیب نے علیم خان کو گھر سے ضروری سامان منگوانے کی اجازت دے دی ہے۔

صوبائی وزیر کو کل لاہور کی احتساب عدالت میں پیش کر کے ان کے جسمانی ریمانڈ کی استدعا کی جائے گی۔

علیم خان نے گرفتاری کے بعد اپنا استعفیٰ وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار کو بھجوادیا ہے۔

عبدالعلیم خان پاکستان تحریک انصاف میں آنے سے پہلے مشرف دور میں پنجاب حکومت میں سنہ 2003 سے 2007 تک آئی ٹی کے صوبائی وزیر کے عہدے پر رہ چکے ہیں، علیم خان سنہ 2011 میں پاکستان تحریک انصاف میں شامل ہوئے تھے، وہ گزشتہ سات سال سے اس جماعت سے وابستہ ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں