سپر بلڈ مون آج رات ہو گا

دنیا بھر میں آج رات سپر بلڈ مون کا نظارہ کیا جا سکے گا،جب زمین سورج اور چاند کے درمیان آجاتی ہے اس وقت کو سپر بلڈ مون کہا جاتا ہے،اس کا دورانیہ ایک گھنٹہ اور دو منٹ کا ہو گا۔

مہم جو فطرت اور غیر معمولی تجسس انسان کو ہر دور میں آسمانوں میں رونما ہونے والی انوکھی تبدیلیوں پر غور و فکر کرنے پر اکساتے رہے،ان میں چاند اور سورج گرہن قابلِ ذکر ہیں ۔

جب زمین اپنے مدار میں گردش کرتے ہوئے کچھ وقت کے لیئے سورج اور چاند کے درمیان حائل ہوجاتی ہے اس وقت ایک مکمل چاندگرہن رونما ہوتا ہے ، فلکیاتی اصطلاح زمین کا جو سایہ چاند پر پڑتا ہے اسے ‘امبرا ‘کہا جاتا ہے۔ اسی کے باعث گرہن کے دوران بعض اوقات چاند سرخی مائل ، اورنج یا خونی دکھائی دیتا ہے۔

سال2018 ء میں 31جنوری کی شب کو جو سرخی مائل چاند دنیا بھر میں دیکھا گیا تھا وہ اس حوالے سے منفرد تھا کہ اس روز سپر مون بھی تھا ۔ جب چاند زمین سے قریب ترین مقام ‘پیریگی’ پر ہونے کے باعث معمول کے سائز سے زیادہ بڑا اور روشن دکھائی دیتا ہے اور کیونکہ اس روز چاند گرہن بھی تھا اور کچھ خاص روشنیاں فلٹر ہوجانے کے باعث وہ سپر مون سرخی مائل دکھائی دیا تھا۔

رواں سال 20 جنوری کی رات کو ایک دفعہ پھر زمین ، چاند اور سورج کے درمیان کچھ وقت کے لیے حائل ہونے والی ہے۔ اس چاند گرہن کی خصو صیت یہ ہے کہ اس میں گرہن کےدوران چاند کا رنگ کچھ دیر کے لیے سرخی مائل نظرآئے گا،  اس لیے اسے سپر بلڈ مون کہا جارہا ہے، آج رات کے بعد  اب 2021 میں ہی دوبارہ مکمل چاند گرہن دیکھا جاسکے گا۔

پاکستان آسٹرو نامرز سوسائٹی سے تعلق رکھنے والے آسٹرونامر طلحہ مون ضیاء کے مطابق پاکستان سمیت ایشیاء، افریقہ اور مڈل ایسٹ میں رہنے والے افراد 20 جنوری کی صبح اس گرہن کا نظارہ کرنے سے محروم رہیں گے کیونکہ اس وقت یہاں علی الصبح کا وقت ہوگا ،لیکن شمالی و جنوبی امریکہ ، شمالی یورپ ، اور شمال مغربی افریقہ کے ساحلوں پر یہ سپر بلڈ مون واضح دیکھا جاسکے گاجہاں گرہن کا آغاز مقامی وقت کے مطابق رات گئے ہوگا جبکہ اس گرہن کا دورانیہ ایک گھنٹہ دو منٹ ہوگا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں